تازہ ترین

News Detail

Movie Andhee Review (1975)

فلم : آندھی (1975) "ایسا لگتا ہے کہ وہ کسی اور صدی کی بات تھی۔" "ہممم شاید ان دنوں کی بات ہوگی جب یہ عمارت ابھی اجڑی نہیں تھی" "ہاں پچھلے کسی جنم ہی کی بات تولگتی ہے۔" "ایک کام کریں، جب تک تم یہاں ہو،، روز گھر پہ کھانے کے لئے تو آیا ہی کرو گی، کھانے کے بعد گھومنے نکل آیا کریں گے۔ کم ازکم یہ عمارت کچھ دنوں کے لئے تو بس جائیگی۔" کبھی کبھی صرف ایک گیت کی وجہ سے پوری فلم دیکھنے پر مجبور ہوجاتا ہوں۔ ایسا ہی ایک گیت ہے "تیرے بنا زندگی سے کوئی شکوہ تو نہیں" جو 1975 میں آئی فلم "آندھی" کا ہے۔ جب میں نے پہلی بار یہ گیت سنا تب مجھے پتہ تھا کہ یہ گیت کس فلم کا ہے۔ چائے خانے میں بیٹھا تھا، ایئر فون موبائل سے علاحدہ کردیا۔ چھ عدد بوڑھے کان پھڑکے اور ایک مونچھوں کے نیچے سے آواز آئی کہ یہ گیت "آندھی" کا ہے جس نے اپنی ریلیز کے دنوں میں اس وقت کی وزیر اعظم اندرا گاندھی کی بائیو گرافی کے طور پر شہرت پائی تھی۔ یہ ایک گم گشتہ محبت کی داستان ہے جس میں میاں بیوی کی 9 برسوں کے بعد اتفاقی ملاقات ہوجاتی ہے۔ ملک کی مشہور سیاستداں آرتی دیوی (سچترا سین) الیکشن کے ایام میں کیمپین چلانے ایک قصبے میں جاتی ہے۔ قصبے میں وہ جس ہوٹل میں ٹھہرتی ہے اس کا مینیجر جے کے (سنجیو کمار) آرتی کا شوہر ہوتا ہے۔ آرتی سیاست میں اپنا کریئر بنانا چاہتی ہے اور جے کے اس کے خلاف ہوتا ہے۔ چنانچہ آرتی جے کے کا گھر چھوڑ دیتی ہے اور میدان سیاست میں سرگرم ہوجاتی ہے۔ نو برسوں کے طویل وقفے کے بعد جب میاں بیوی کی ملاقات ہو اور ملاقات کروانے کی ذمہ داری (ہدایت کاری) معروف نغمہ نگار گلزار کے کاندھوں پر ہو تو پھر کیسی شاہکار ملاقات ہوسکتی ہے اس کا اندازہ فلم دیکھ کر ہی ہوگا۔ آرتی دیوی قصبے میں الیکشن کمپین کے لئے آتی ہے لیکن قصبے میں اپنے شوہر کے ساتھ ایک رات وہ ایک بارہ دری کی سیر کے لئے چلی جاتی ہے جہاں ایک فوٹو جرنلسٹ ان کی تصویریں بنا لیتا ہے اور ان تصویروں کے ذریعے سے مخالف پارٹیاں آرتی دیوی کا Character Assassination کرتی ہیں کیونکہ وہ اس سے لاعلم ہوتی ہیں کہ آرتی دیوی بارہ دری میں کسی اور کے ساتھ نہیں بلکہ اپنے شوہر کے ساتھ گئی تھی۔ آرتی بھی بہرحال سیاستداں ہوتی ہے اور ہزار مخالفتوں کے باوجود محض ایک جلسے سے الیکشن اپنے حق میں کرلیتی ہے جس طرح ماضی میں اندرا گاندھی کرلیتی تھیں۔ سنجیو کمار تو اداکاری کی ایک یونیورسٹی ہیں لیکن آندھی میں آرتی دیوی کے کردار میں سچترا سین نے جو چھاپ چھوڑی ہے اس میں سنجیو کمار بھی کہیں گم ہوگئے ہیں۔ 9 برسوں کے بعد کی ملاقات کا تاثر سچترا اپنی آنکھوں سے ہی دے دیتی ہیں جن میں وصال کی چمک، فراق کا فسوں، ماضی کی الجھن اور مستقبل کے اندیشے سب ہی نظر آتے ہیں۔ گلزار اس فلم کے مائی باپ ہیں۔ ہدایت کاری کے علاوہ اسکرین پلے، ڈائلاگ اور نغمے سب ہی گلزار کے تحریر کردہ ہیں شاید اس لئے اس فلم کی IMDB ریٹنگ 8.2 ہے۔

Comment Box is loading comments...

Make up Tip of the day

Using Small plates are Helping lose belly fat

Cooking Tip of the day

Aaloo Chaps (Potato Chaps)