تازہ ترین

News Detail

Movie Yahodi movie review..

اس فلم میں میری اولین دلچسپی اس کے ٹائٹل سے تھی۔ لیکن فلم دیکھنی شروع کی تو ٹائٹل کہیں پیچھے چھوٹ گیا۔ یہ فلم ہندی سینما کی بہترین کاسٹ والی فلموں میں سے ایک ہے جس میں شہشاہ جذبات دلیپ اور ٹریجڈی کوئن مینا کماری کے ساتھ سہراب مودی، ناظر حسین اور نگار سلطانہ نے اپنی اداکاری کے جوہر دکھائے ہیں۔ یہ کہانی ایک رومی شہزادے مارکوس کی ایک عام سی یہودن حنّہ سے محبت کی کہانی ہے۔ فلم کے آغاز میں رومن مذہبی پیشوا ایک یہودی عذرا کے بیٹے کو شیر کے پنجرے میں ڈال دیتا ہے۔ انتقام کی آگ جھلستا عذرا کا غلام رومن مذہبی پیشواء کی بیٹی کو محل سے اغواء کرکے عذرا کے قدموں میں ڈال دیتا ہے۔ لیکن عذرا اس رومن کی بیٹی کو قتل کرنے کی بجائے اس کی پرورش کرتا ہے اور اس کا نام حنّہ رکھتا ہے۔ شہزادہ مارکوس ایک رومن شہزادی کی سالگرہ میں شرکت کی غرض سے تیز رفتار رتھ کے ذریعے جارہا ہوتا ہے کہ رتھ حادثے کا شکار ہوجاتا ہے۔ مارکوس جہاں جا کر گرتا ہے وہاں سے حنّہ اپنی سہیلی کے ساتھ گزر رہی ہوتی ہے۔ وہ دوڑ کر مارکوس کے پاس پہنچتی ہے تو مارکوس اس کے ملکوتی حسن کو دیکھ کر پوچھتا ہے کہ وہ دنیا میں ہے یا جنت میں پہنچ چکا ہے۔ یہاں سے محبت شروع ہوتی اور رومن شہزادہ حنّہ کے سامنے خود کو اسکندریہ کا ایک جوہری بنا کر پیش کرتا ہے کیونکہ حنّہ کا باپ عذرا بھی ایک جوہری ہی ہوتا ہے۔فلم بڑھتی رہتی ہے پھر رومن شہزادہ یہود کی ایک ایسی مجلس میں شریک ہوتا ہے جہاں شرکاء اپنے ایمان کی تجدید کرتے ہیں۔ رومن شہزادہ اس رسم سے کنی کاٹ کر نکلتا ہے تو حنہ دیکھ لیتی ہے کہ اسکندریہ کے جوہری نے یہودی رسوم کو درکنار رکھ دیا۔ یہاں سے وہ کہانی شروع ہوتی ہے جس کے لئے دلیپ کمار کو شہنشاہ جذبات اور مینا کماری کو ٹریجڈی کوئن کہا جاتا ہے۔ فلم میں جہاں چھوٹی چھوٹی باتوں کا دھیان رکھا گیا ہے وہیں ایک فاش غلطی بھی کی گئی ہے جس میں اسکندریہ کے جوہری کا راز فاش ہوجانے کے بعد عذرا اس کے سامنے یہ شرط رکھتا ہے کہ اگر حنّہ سے شادی کرنی ہے تو یہودی مذہب قبول کرنا ہوگا۔ جبکہ یہود اپنے مذہب کی تبلیغ نہیں کرتے،،،، انکے ہاں یہودی وہی ہوتا ہے تو پیدائشی طور پر یہودی ہو،،،، کسی مذہب سے یہودی مذہب میں کنورٹ نہیں ہوا جاسکتا۔ سشتہ اور سلیس اردو مکالمے اس فلم میں چار چاند لگاتے ہیں۔ عذرا جوہری کے کردار میں سہراب مودی کے شاعرانہ ڈائلاگ کافی متاثر کرتے ہیں۔ کچھ خاص مقامات پر احساس ہوتا ہے کہ اس فلم کا نام یہودی کیوں رکھا گیا ہے۔ بحیثیت مجموعی فلم رومن استبداد کی یہودیوں پر کئے گئے مظالم کا احاطہ کرتی ہے وہیں رومن انصاف کو بھی اجاگر کرتی ہے کہ رومن شہنشاہ ایک عام سی یہودن کی فریاد پر اپنے ولی عہد کو بھی پھانسی کی سزا سنا دیتا ہے۔ کلائمکس اگر درج کردیا تو فلم کا لطف جاتا رہے گا۔ اس فلم کا ایک گیت "یہ میرا دیوانہ پن ہے" آج بھی زباں زد عام ہے۔

Comment Box is loading comments...

Make up Tip of the day

Using Small plates are Helping lose belly fat

Cooking Tip of the day

Aaloo Chaps (Potato Chaps)