تازہ ترین

News Detail

بومبے ویلوٹ. شاید دنیا کی تاریخ کی سب سے انڈر ریٹڈ فلم. Bombay velvet the underrated movie...

نہایت بری طرح فلاپ ہونے والی اس فلم کی ناکامی کا صدمہ جتنا انوراگھ کشپ اور رنبیر کپور کو ہوا ہوگا, مجھے بھی اس سے کم نہیں ہوا. انوراگھ کشپ اس فلم کے ہدایتکار ہیں. اس فلم میں 50,60,70 کی دہائیوں کا وقت دیکھایا گیا ہے جب بومبے ایک عام شہر سے develop ہوکر ایک مہا نگر بننے جارہا تھا. دو اخبارات کے مالکان کی آپسی لڑائی اس فلم کا موضوع ہے جن میں سے ایک یعنی کیزار کھمباٹا بومبے کی ترقی چاہتا ہے اور مل مالکان, بزنس مینوں کے ساتھ ملا ہوا ہے. جبکہ جمشید مستری ایک سوشلسٹ اخبار مالک اس ترقی کو روکنا چاہتا ہے جس کے لئے اسلے پاس جواز ہے مل مزدوروں کی فلاح و بہبود اور انکا روزگار. کیزار کھمباٹا یعنی کرن جوہرایک opportunist سڑک چھاپ لفنگے بلراج یعنی رنبیر کپور کو اپنے مقصد کے لئے ہائیر کرتا ہے. اور ایک عالی شان کلب تعمیر کرتا ہے جسکا نام بومبے ویلوٹ ہے. بلراج کھمباٹا کے لئے قتل اور بلیک میلنگ جیسے کام کرتا ہے. وہاں بلراج کو روزی یعنی انوشکا شرما سے محبت ہو جاتی ہے جوکہ جمشید مستری کے لئے کام کرتے ہے. جمشید روزی کو بلراج کے پاس جاسوسی کے لئے بھیجتا ہے. اس سے آگے کیا کیا ہوا وہ جاننے کے لئے آپ فلم دیکھئے. اس فلم میں اداکاری کا لیول مجھے بہت پسند آیا. رنبیر نے ہمیشہ کی طرح کمال کا کام کیا. لیکن اس سے بھی زیادہ زبرست اداکاری مجھے کرن جوہر کی لگی. انوشکا, جمشید مستری کا رول کرنے والا اداکار(جسکا نام مجھے نہیں پتہ) سمیت سب نے اپنے اپنے رول کے ساتھ انصاف کیا. اس فلم کی سب سے خاص بات اسکے سیٹ ہیں. بومبے ویلوٹ کلب, اور اس دور کے سٹائل اور بلڈنگز سب کچھ بہت ہی گریس فل لگتا ہے. سینماٹوگرافی اس فلم کی شان ہے جسے میں نے سب سے زیادہ انجوائے کیا. لیکن اس کی سنیماٹوگرافی ہالی ووڈ کی فلمز the great gasby اور the gangster squad کی نقل لگتی ہے. ڈائیلاگز کی بات کی جائے تو کئی ڈائیلاگز بہت مزہ دیتے ہیں. جمشید مستری کے ڈائیلاگ جن میں وہ کھمباٹا کو مخاطب کر کے warning دے رہا ہے, "ریگل سینما میں ٹارچ دیکھانے والے کو سوٹ پہنا کر جوہنی بلراج تو بنا سکتے ہو لیکن فٹ پاتھ پر سنگِ مرمر چڑھانے سے وہ تاج محل نہیں بن جاتا" اور اس جیسے کئی ڈائیلاگز باذوق افراد کو واہ واہ کرنے پر مجبور کر دیتے ہیں. انوراگھ کی تمام فلموں کے گانے بہت مختلف ہوتے ہیں. اس فلم میں جیز میوزک ڈالا گیا ہے جو مجھے ذاتی طور پر بے حد پسند آیا. اب کچھ منفی پہلوؤں کی بات کرتے ہیں. یہ فلم انوراگھ کی تمام فلموں کی طرح بہت سست ہے. ڈائیلاگز کا مزہ دینے کے چکر میں کئی سینز کو لمبا کھینچا گیا جس سے ذاتی طور پر مجھے کوئی اعتراض نہیں لیکن پبلک کو اکثریت اس سے بہت بور ہو جاتی ہے. دوسری خامی یہ ہے کہ فلم کی کہانی پیچیدہ ہے جسے سمجھنے کے لئے پورا دھیان لگانا ضروری ہے. لیکن جب pace ہی اتنی سلو ہو تو انسان بور ہو کر کیا دھیان دے؟ شاید ان دو وجوہات کی بنا پر یہ فلم بری طرح فلاپ ہوئی. حالانکہ جب گینگز آف واسےپور اور لنچ باکس جیسی آرٹ موویز سوپر ہِٹ ہوئی تھیں تو اس فلم کا ناکام ہونا زیادتی کی بات ہے. مجھے ذاتی طور پر یہ فلم بہت پسند ہے. اور جب میں نے اسے دیکھا تو اسے بالیووڈ کی نمبر 1 فلم قرار دیا. بعد اذاں کہانی 2 کے آنے کے بعد اب یہ میری لسٹ میں نمبر 2 پر چلی گئی ہے

Comment Box is loading comments...

Make up Tip of the day

Using Small plates are Helping lose belly fat

Cooking Tip of the day

Aaloo Chaps (Potato Chaps)