تازہ ترین

News Detail

خیبر پختونخوا کے چار لاکھ 33 ہزار سرکاری ملازمین اور ان کے خاندان والوں کا علاج معالجہ انشورنس کارڈ پر منتقل

خیبر پختونخوا کے چار لاکھ 33 ہزار سرکاری ملازمین اور ان کے خاندان والوں کا علاج معالجہ انشورنس کارڈ پر منتقل کرنے کے مجوزہ منصوبے پراخراجات اور وسائل سے متعلق تجاویز کو حتمی شکل دیدی گئی ہے اس سلسلے میں آج وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ میں اجلاس طلب کیا گیا ہے جہاں پرا س منصوبے سے متعلق تجاویز اور سفارشات کی منظوری متوقع ہے واضح رہے کہ خیبر پختونخوا میں ایک سے لیکر بائیس سکیل تک کے4لاکھ اور33ہزار ملازمین کام کر رہے ہیں جنکے طبی اخراجات کی مد میں حکومت سالانہ اربوں روپے کا اجرا کرتی ہے جس میں کمی لانے کیلئے سرکاری ملازمین کو بھی صحت سہولت پروگرام کی طرز پر صحت کارڈ کے اجراء کی منصوبہ بندی کی گئی تھی اس سلسلے میں کئی مہینوں سے تجاویز اور سفارشات پر غور کیا جارہا تھا تاہم محکمہ صحت کے ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ اس منصوبے کیلئے مسودے کو طویل غور کے بعد حتمی شکل دیدی گئی ہے جس میں اس منصوبے پر تقریبا پانچ ارب روپے سالانہ کا تخمینہ لگایا گیا ہے لیکن اس کیلئے وسائل پیدا کرنیکی سفارش بھی کی گئی ہے جن کے مطابق تمام گریڈ کے ملازمین کو انشورنس کارڈ پر ہر قسم کا علاج یکساں بنیادوں پر دیا جائیگا لیکن اس مد میں سالانہ بنیادوں پر ان ملازمین سے ان کے سکیل کے مطابق پانچ سے دس ہزار روپے کی سالانہ کٹوتی کی تجویز بھی دی گئی ہے جس سے اس منصوبہ کے تخمینہ لاگت پانچ ارب روپے سے کم ہوسکے گی بتایا جار ہا ہے کہ اس حوالے سے محکمہ ہائے خزانہ،صحت اور انتظامی امور کے افسران کے ساتھ وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ میں منگل کے روز اجلاس میں ہونگے۔ جس میں ان تجاویز اور سرکاری ملازمین کا علاج انشورنس پر منتقل کرنے کی حتمی منظوری متوقع ہے۔

Comment Box is loading comments...

Make up Tip of the day

Using Small plates are Helping lose belly fat

Cooking Tip of the day

Aaloo Chaps (Potato Chaps)