تازہ ترین

News Detail

Hum dil de chuke sanam movie review

پیار پر کیا تُمہِید باندھنی. اک پیراگراف ہی کافی ہے. جو جُھلس رہے ہیں خود ہی بھڑک اُٹھیں گے۔ یہ کون سا پانی ہے جو سو ڈگری پر ہی اُبلے گا۔ آگ لگانے کو اک چوٹ ہی کافی ہوتی ہے۔ نا تو محبت کو سمجھنے کے لئے کسی گھونسلے میں جنم لینے کی ضرورت ہے. اور نا ہی پٙروں یا چُونچ کا ہونا لازم ہے. یہ جب اُڑان بھرتی ہیں تو دل چاہتا ہے اپنے ہی خُمار میں خط استواء پر اُڑتے اُڑتے زمین کے کِناروں سے نکل جائیں۔ لیکن پھر بھی عجیب ہے یہ۔۔۔ جتٙن ہے یا جٙبر...پانے کا نام ہے یا کُھونے کا۔۔. جانے سٙاون کی بارش میں نہانا ہے یا سینکھنا ہے سردی کی پِیلی دُھوپ کو۔۔۔ کچھ سمجھ نہیں آتا۔۔۔ خیر محبت کو کچھ سمجھنے کے لئے اس مووی کا سہارا لیتے ہیں جو ہمیں دونوں انتہاوں کی چُبھن سے رُوشناس کروائے گی۔ محبت میں انوکھا تو اکثر لوگ کرتے ہیں. اور اسی انوکھے پن کو لے کر محبوبہ کو لبھانے سے شروع ہوتی ہے یہ مووی۔ جس میں سُر اور سنگیت کو سِیکھنے کا اِک مُتلاشی اپنے ہی گُرو کی خوبصورت بیٹی پر فِدا ہو جاتا ہے۔ آنکھوں سے شروع ہونے والی گُستاخِیاں ناقابل تلافی گناہ بن جاتی ہیں۔ اور مُحب اور مُحبوب کی راہیں جدا کر دی جاتی ہیں۔ لڑکا شِکستہ دل ساتھ پردیس سٙدھار جاتا ہے۔ لڑکی کا سنگیت کار باپ لڑکی کی شادی اِک دوسرے لڑکے سے کر دیتا ہے۔ اور یہ سنجیدہ کردار ادا کیا ہے اجے دیوگن نے۔ اِک بہت پیارے دوست کی اس بات سے مکمل اتفاق کرتا ہوں کہ فلم میں جان "اجے دیوگن" کی انڑی سے آتی ہے۔ وہ محبت ہی کیا جو صنم کے بے چین ہونے پر بے چین نا ہو۔ اجے کو جب حقیت کا پتہ چلتا ہے۔ تو محبت کی دوسری انتہا کا اصول اپناتا ہے سدا سادہ سادہ رہنے کا۔ اپنی ہی ذات کے گرد ہالہ بنا کر آلتی پالتی مار کر بیٹھ جانے کا ' جس کے اندر محبوب کا آنا بھی ممنوع ہوتا ہے۔ اور اپنی ہی بیوی کو اس کے محبوب سے ملوانے کے لئے سات سمندر پار لے جاتا ہے۔ خالص مشرقی طٙرز کا اختتام دِسمبر کی اِن راتوں میں تِشنگی کو بڑھا دے گا۔ اس رُومانی میوزیکل مووی کی خوبصورت دُھنیں تخلیق کی ہیں اسماعیل دربار نے اور بھنسالی کی بانسری سے نکلے اس مُدھیر سُر کا نام ہے۔ ہم دل دے چکے صنم۔

Comment Box is loading comments...

Make up Tip of the day

Using Small plates are Helping lose belly fat

Cooking Tip of the day

Aaloo Chaps (Potato Chaps)